سوشل میڈیا پر ڈالے گئے مسلم جذبات کو ٹھیس پہنچانے والے مواد، کئی علاقوں میں کشیدگی


قابل ذکر ہے کہ گوا کے وزیر اعلیٰ پرمود ساونت نے پہلے ہی ایسے کسی بھی تبصرہ کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کی تنبیہ دی تھی جو ممکنہ طور سے مذہبی جذبات کو ٹھیس پہنچا سکتے ہیں۔ ساونت نے کہا تھا کہ ’’کسی کو بھی دوسرے مذہب کی تنقید نہیں کرنی چاہیے۔ یہ ہر شخص پر منحصر کرتا ہے کہ اسے کس بھگوان کی تعریف کرنی چاہیے یا کسی کی عبادت کرنی چاہیے۔ نہ تو ہندو اور نہ ہی عیسائی کو دوسرے مذاہب کے خلاف بولنا چاہیے۔ اگر لوگوں کے جذبات ایسے بیانات سے مجروح ہوتے ہیں تو حکومت کارروائی کرے گی۔‘‘

Leave A Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *