دہلی ایئرپورٹ پر ایئر انڈیا کے 3 ملازمین انسانی اسمگلنگ کے الزام میں گرفتار


دہلی پولیس کے ایک عہدیدار نے بتایا کہ سی آئی ایس ایف کے اہلکاروں نے ایئر انڈیا کے تین ملازمین کو جعلی دستاویزات کی بنیاد پر ایک شخص کو یورپی ملک جانے کی اجازت دینے کی کوشش کرنے پر گرفتار کر لیا

آئی اے این ایس

user

نئی دہلی: دہلی پولیس کے ایک عہدیدار نے جمعرات کو بتایا کہ سی آئی ایس ایف کے اہلکاروں نے ایئر انڈیا کے تین ملازمین کو جعلی دستاویزات کی بنیاد پر ایک شخص کو یورپی ملک جانے کی اجازت دینے کی کوشش کرنے پر گرفتار کر لیا۔ تاہم، سینٹرل انڈسٹریل سیکورٹی فورس (سی آئی ایس ایف) نے دعویٰ کیا کہ ایئر لائن کے عملے کے چار ارکان اور ایک مسافر کو گرفتار کیا گیا ہے۔

سی آئی ایس ایف نے ایک بیان میں کہا، ’’بدھ کی دوپہر تقریباً 1.15 بجے آئی جی آئی ہوائی اڈے، نئی دہلی پر سی آئی ایس ایف کے نگرانی اور انٹیلی جنس اہلکاروں نے ڈیپارچر گیٹ نمبر 5 کے قریب چیک ان ایریا میں بیٹھے ایک مسافر کی مشتبہ حرکت دیکھی۔ مسافر کی شناخت دلجوت سنگھ کے طور پر کی گئی، جو ایک ہندوستانی شہری تھا۔ اس کا دہلی سے برمنگھم تک سفر کرنے کا ارادہ ہماری توجہ کا مرکز بنا۔‘‘

پروفائلنگ کے خدشات کی وجہ سے سنگھ کو چوکی پر سخت اسکریننگ سے گزرنے کی ہدایت کی گئی۔ سی آئی ایس ایف کے ایک سینئر افسر نے کہا، ’’اس کے سامان کی وسیع پیمانے پر جانچ کے باوجود کوئی مشکوک چیز نہیں ملی لیکن سنگھ طیارے میں سوار نہیں ہوا، جس سے خدشات پیدا ہوئے۔ جب اس سے طیارے میں سوار نہ ہونے کے بارے میں پوچھا گیا تو وہ تسلی بخش جواب نہیں دے پایا۔‘‘

انہوں نے کہا، ’’شبہ ہونے پر سی سی ٹی وی فوٹیج کے ذریعے اس کی ماضی کی حرکات کا پتہ لگایا گیا۔ مسافر کی الیکٹرانک نگرانی اور پوچھ گچھ سے پتہ چلا کہ ایف-11 کاؤنٹر پر چیک ان کرنے کے بعد وہ امیگریشن کے لیے روانہ ہوا، جہاں اہلکاروں نے اسے مشکوک سفری دستاویزات رکھنے کی وجہ سے روک دیا۔‘‘

سی سی ٹی وی فوٹیج کے مزید جائزے سے پتہ چلا کہ سنگھ نہ تو چیک ان کاؤنٹر پر واپس آیا اور نہ ہی امیگریشن کاؤنٹر پر۔ بعد میں پوچھ گچھ سے پتہ چلا کہ عملے کے کاؤنٹر پر چیک ان کی رسمی کارروائیوں کو ایئر انڈیا کے عملے روہن ورما سی ایس اے نے جھوٹے دستاویزات کی بنیاد پر مکمل کیا تھا۔ جب پوچھ گچھ کی گئی تو ورما نے اعتراف کیا کہ اس کے ساتھی محمد جہانگیر سی ایس اے، اے آئی ایس اے ٹی ایس کی ہدایات کے مطابق اس نے مسافر کی جانچ پڑتال کی رسمی کارروائیاں مکمل کیں۔ جعلی دستاویزات کا استعمال کرنے والے مزید دو مسافروں سے اے 80 ہزار روپے حاصل ہوئے تھے۔‘‘

بیان میں کہا گیا، ’’تفتیش پر جہانگیر نے اعتراف کیا کہ اس نے اپنے ساتھی کو جعلی دستاویزات کا استعمال کرتے ہوئے مسافروں کے چیک ان کی رسمی کارروائیوں کو مکمل کرنے کی ہدایت کی تھی کیونکہ اسے مہیپال پور کے رہائشی راکیش نے فی مسافر 40000 روپے کی پیشکش کی تھی۔‘‘ اس کے بعد مسافر سمیت تمام ملوث ملازمین کو مزید قانونی کارروائی کے لیے دہلی پولیس کے حوالے کر دیا گیا۔

ایف آئی آر کے مطابق ایئر لائن کے عملے کے تین ارکان ورما، یش اور جہانگیر کو گرفتار کیا گیا۔ ان سے پوچھ گچھ کی جا رہی ہے۔ پولیس نے آئی جی آئی ایئرپورٹ پولیس اسٹیشن میں دفعہ 420 (دھوکہ دہی)، 468 (دھوکہ دہی کے مقصد سے جعل سازی)، 471 (جعلی دستاویزات بنانا) اور 120-بی (مجرمانہ سازش) کے تحت ایف آئی آر درج کی ہے۔

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


;

Leave A Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *