کرناٹک میں ’حجاب‘ سے ہٹ گئی پابندی، کانگریس حکومت نے وعدہ کیا پورا


کرناٹک میں حجاب تنازعہ کا آغاز ریاست کے اڈپی واقع ایک سرکاری کالج سے ہوئی تھی جہاں مسلم طالبات کو حجاب پہن کر کالج آنے سے روک دیا گیا تھا۔ اسکول انتظامیہ نے حجاب کو کالج کے یونیفارم کوڈ کے خلاف بتایا تھا۔ اس کے بعد یہ تنازعہ دیگر کالجوں میں بھی پہنچ گیا تھا۔ پھر مسلم طالبات نے جگہ جگہ احتجاجی مظاہرے کیے تھے۔ ہنگامہ بڑھنے کے بعد بی جے پی حکومت نے تعلیمی اداروں میں حجاب پر پابندی لگا دی تھی۔ اس فیصلے کو مسلم طالبات نے ہائی کورٹ میں چیلنج پیش کیا جہاں عدالت نے حجاب پر پابندی کے فیصلے کو برقرار رکھتے ہوئے کہا تھا کہ حجاب پہننا اسلام کا لازمی مذہبی پریکٹس نہیں ہے۔ پھر معاملہ سپریم کورٹ پہنچا جہاں دو ججوں کی بنچ نے الگ الگ فیصلہ سنایا۔ ایک جج نے کہا کہ اسکول اپنا یونیفارم نافذ کرنے کے لیے آزاد ہے، جبکہ دوسرے جج نے اسے پسند کا معاملہ بتایا تھا۔

Leave A Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *